بنیادی صفحہ / سرمایہ کاری / جائیداد / ڈی ڈی اے کی ہاﺅسنگ اسکیم لانچ، ویب سائٹ ’کریش‘

ڈی ڈی اے کی ہاﺅسنگ اسکیم لانچ، ویب سائٹ ’کریش‘

dda housing

نئی دہلی، یکم ستمبر (یو این بی): دہلی ڈیولپمنٹ اتھارٹی (ڈی ڈی اے) کی ہاﺅسنگ اسکیم 2014 کے تحت ملنے والے فلیٹوں کے لیے آج سے فارم کی فروخت شروع ہو گئی ہے۔ صبح ساڑھے نو بجے اسکیم لانچ ہوتے ہی آن لائن فارم پر کرنے والوں کی ایک بڑی تعداد نے ڈی ڈی اے کی ویب سائٹ dda.org.in کو استعمال کرنا شروع کر دیا۔ اس کی وجہ سے ویب سائٹ ’کریش‘ کر گئی۔

واضح رہے کہ ڈی ڈی اے ہاﺅسنگ اسکیم کے تحت کل 25034 فلیٹ ملیں گے۔ ہاﺅسنگ اسکیم سے متعلق تفصیلی جانکاری حاصل کرنے کے لیے ڈی ڈی اے صدر دفتر پہنچنے والے لوگوں کی بھاری تعداد کو دیکھتے ہوئے ڈی ڈی اے ملازمین بھی پرجوش نظر آ رہے ہیں۔ ڈی ڈی اے کے نائب صدر بلوندر کمار کا کہنا ہے کہ شروع میں ہم نے 15 لاکھ فارم چھپوائے ہیں لیکن امید ہے کہ اس کی تعداد میں مزید اضافہ کرنا پڑے گا۔ فارم کی قیمت 200 روپے ہے اور یہ 13 بینکوں میں دستیاب ہے۔ انھیں آن لائن بھی درخواست کیا جا سکتا ہے۔ فلیٹ سے متعلق تفصیلی جانکاری ڈی ڈی اے کے ویب سائٹ پر بھی دستیاب ہے۔ یہ فارم 9 اکتوبر تک بھرے جا سکتے ہیں اور فلیٹ کے لیے ڈرا 29 اکتوبر کو نکالے جانے کا امکان ہے۔

ڈی ڈی اے افسران نے اطلاع دی ہے کہ فلیٹ کی اسکیم سے متعلق لوگوں میں جوش دیکھنے کو مل رہا ہے۔ پچھلے ایک ہفتہ سے معلومات حاصل کرنے کے لیے سینکڑوں درخواستیں آئی ہیں جسے دیکھتے ہوئے شروع میں 15 لاکھ فارم چھپوائے گئے ہیں اور ضرورت پڑنے پر مزید فارم چھپوائے جائیں گے۔ فلیٹ اسکیم میں بکنگ کے لیے جنرل درجہ کے درخواست دہندہ کو ایک لاکھ روپے کی رقم دینی ہوگی جب کہ ای ڈبلیو ایس درجہ والے درخواست دہندہ کو دس ہزار روپے دینے ہوں گے۔ اگر لکی ڈرا میں درخواست دہندہ کے نام پر فلیٹ الاٹ نہیں ہوتا ہے تو ان کی رقم واپس کر دی جائے گی۔ اگر کسی درخواست میں غلط جانکاری دینے کی بات سامنے آتی ہے تو درخواست دہندہ کی رقم ضبط کی جا سکتی ہے۔

جہاں تک فلیٹ اسکیم سے متعلق شرائط و ضوابط کا سوال ہے، تو درخواست دہندہ کی عمر 18 سال سے کم نہیں ہونی چاہیے اور درخواست دہندہ کے پاس لازمی طور پر ’پین کارڈ‘ ہونا چاہیے۔ اس کے علاوہ ایک شخص ایک ہی فارم جمع کر سکتا ہے۔ اگر کسی شخص کے پاس دہلی میں اپنے نام پر کوئی ملکیت ہے تو وہ اس اسکیم کا حصہ نہیں بن سکتا ہے۔

تعارف: نمائندہ خصوصی

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*