بنیادی صفحہ / خبریں / حج و عمرہ کے لیے ۱۰۰ نئی کمپنیوں کو لائسنس جاری ہونے کا امکان

حج و عمرہ کے لیے ۱۰۰ نئی کمپنیوں کو لائسنس جاری ہونے کا امکان

حج

نمائندہ خصوصی معیشت ڈاٹ اِن
ریاض (معیشت نیوز)سعودی عرب ویژن ۲۰۳۰کے تحت نئے منصوبوں پر عمل آواری کے لیے کمر بستہ ہے ۔لہذا ۲۰۲۰؁تک سعودی عرب کو محض عمرہ سیزن سے سالانہ ۵۵کھرب ۹۰ ارب روپئے کی آمدنی متوقع ہے۔ایک تخمینہ کے مطابق ہر برس پانچ لاکھ افراد عمرہ ادا کرتے ہیں یہی وجہ ہے کہ آئندہ برس وزارت حج ۱۰۰ نئی کمپنیوں کو لائسنس جاری کرنے کی پلاننگ کررہاہے۔جس کا راست فائدہ ہندوستان کو بھی ملنے والا ہے۔

معیشت کی خبر: عمرہ: سعودی معیشت کو 1 ارب 60 کروڑ ڈالرز کی آمدنی

مقامی اخبار’’سعودی گزٹ‘‘نے مکہ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کےلیے قومی حج و عمرہ کمیٹی کےسابق رکن سعد بن جمیل امام قرشی کے حوالےسے لکھا ہے کہ ۲۰۲۰؁ تک عمرہ ادا کرنے والوں سے ہونے والی آمدنی ۲۰۰ ارب ریال پہنچنے کی توقع ہے۔انہوں نے اعداد و شمار کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ’’تقریباً ہر سال پانچ لاکھ افراد عمرہ کرتے ہیں ۔چونکہ عمرہ سیزن کا آغاز اسلامی کیلنڈر کے دوسرے مہینے صفر کی پہلی تاریخ سے ہوتا ہے اور ماہ شوال تک رہتا ہے لہذا عازمین ان نو مہینوں کے درمیان آتے ہیں۔

معیشت کی خبر: ہندوستانی معیشت پر حج کے فائدے

انہوں نے کہا کہ رواں عمرہ سیزن ۱۳نومبر ۲۰۱۵ ؁سے شروع ہوا ہے جو جولائی ۲۰۱۶؁ کے آخر تک رہے گا ۔اہم بات یہ ہے کہ مکہ و مدینہ میں تمام بنیادی انفراسٹرکچر کے منصوبے مکمل ہو چکے ہیں یا تکمیل کے قریب ہیں۔
اس کے علاوہ ان منصوبوں میں حرمین ایکسپریس ٹرین،جدہ میں نئی شاہ عبد العزیز انٹر نیشنل ایئر پورٹ،طائف ہوائی اڈہ کی توسیع اور دونوں مقدس شہروں میں ٹاورز کی ایک بڑی تعداد کی تعمیرشامل ہیں۔جبکہ حرمین ٹرین فی گھنٹہ نو ہزار عازمین کو لے کر جائے گی۔
قریشی کے مطابق ’’حج و عمرہ خدمات کے حوالے سے سعودی ۲۰۳۰؁ ویژن ۳۰ ہزار سعودی مرد و خواتین کو روزگار کے مواقع فراہم کرے گا۔انہوں نے کہا کہ اس وقت ۵۰ حج کمپنیاں ہیں لیکن وزارت حج اس سال کے حج کے بعد ۱۰۰ نئی کمپنیوں کو لائسنس دے گی۔

تعارف: نمائندہ خصوصی

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*