بنیادی صفحہ / خبریں / ہندتووادی صحافی ارنب گوسوامی پر چوری کا الزام،مقدمہ درج

ہندتووادی صحافی ارنب گوسوامی پر چوری کا الزام،مقدمہ درج

ارنب گوسوامی

ارنب گوسوامی

ممبئی :(معیشت نیوز)انگریزی نیوز چینل ٹائمس ناؤ نے اپنے سابق ملازم اور ریپبلکٹی وی کے بانی ہندتواوادی صحافی ارنب گوسوامی کے خلاف چوری کرنے کے الزام میں فوجداری مقدمہ دائر کیا ہے. انگریزی اخبار اکنامک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق بینٹ کولمین اینڈ کمپنی لمیٹڈ ( بي سي سي ایل) نے کاپی رائٹ کی خلاف ورزی کے لئےایک اور سابق ملازم پریما سری دیوی کے خلاف بھی شکایت درج کرائی ہے.ممبئی کے آزاد میدان پولیس اسٹیشن میں تعزیرات ہند کی دفعہ 406، 409، 411، 414، اور 418 کے ساتھ دفعہ 378، 403، 405 اور دفعہ 378 کے علاوہ 6-B، 72 اور 72 کے علاوہ آئی ٹی ایکٹ، 2000 اے کی اسٹریمز میں کیس درج کرایا گیا ہے.
گوسوامی پر دائر مقدمات میں مجرمانہ چوری، خلاف ورزی، جائیداد کا غلط استعمال کا الزام ہے. واضح رہے کہ 6 مئی اور 8 مئی کو ریپبلک ٹی وی پر دکھائے گئے ٹیپ ٹائمس ناؤ کی جائیداد سمجھا گیا تھا جسے چوری سے گوسوامی نے اپنے چینل ریپبلک ٹی وی پر چلا دیا تھا.
دریں اثناء نیوز برڈكاسٹرس ایسوسی ایشن این بی اے نے چینل پر سنسنی خیز الزام لگاتے ہوئے کہاہے کہ اس نے زیادہ ويورس لانے کے لئے غیر اخلاقی ڈسٹریبوٹ حکمت عملی کا سہارا لیا ہے ۔ بیسٹ میڈیا انفو نام کی ایک ویب سائٹ کی خبر کے مطابق این بی اے نے ٹیلی ریگولیٹری اتھارٹی آف انڈیا کو ایک خط لکھ کر الزام لگایاہے کہ گوسوامی چینل ملٹی سسٹم آپریٹرز کے پلیٹ فارموں پر کئی فیڈس چلا رہا تھا۔ خیال رہے کہ اس سے پہلے کبھی بھی این بی اے نے مبینہ کاروبار سے متعلق غلط طریقوں کیلئے کسی بھی چینل کے خلاف آواز نہیں اٹھائی ہے۔
رپورٹ کے مطابق این بی اے نے الزام لگایا ہے کہ ریپبلک چینل کو الگ الگ جگہوں پر مختلف طریقوں سے لسٹیڈ کیا گیا تھا۔ این بی اے نے ریپبلک ٹی وی کے عمل کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے ٹرائی سے اس کے خلاف ایکشن لینے کیلئے بھی کہا ہے تاکہ کوئی اور ٹی وی چینل مستقبل میں اس طرح کے طریقے نہ اپنا سکے۔
ملک کے 171 شہروں خاص طور پر اتر پردیش اور اتراکھنڈ میں ریپبلک ٹی وی کے ڈبل اور کئی معاملات میں ٹرپل فیڈ سامنے آئے ہیں۔ اس چینل سے وابستہ ایک ذرائع نے بتایا کہ ٹائمس ناؤ گزشتہ کئی برسوں سے یہ کام کر رہاہے اور دیگر چینلز بھی ۔ وہ بھی ہیتھ وے، انڈین کیبل نیٹ کمپنی لمیٹڈ ، ایس سی او ڈی اور باقی دیگر ڈسٹریبیوٹر نیٹ ورکس پر ڈبل فیڈ چلا رہے ہیں۔ جبکہ 2017 کے ٹرائی نوٹیفکیشن کے مطابق ڈسٹری بیوٹرز کے لئے یہ لازمی ہے کہ وہ چینلز کو ایک ہی فیڈ میں چلائیں۔

تعارف: نمائندہ خصوصی

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*