بنیادی صفحہ / خبریں / اتحاد بلڈرس اینڈ ڈیولپرس کے منیجنگ پارٹنر شبیر خان ممبرا کو دے رہے ہیں نئی پہنچان

اتحاد بلڈرس اینڈ ڈیولپرس کے منیجنگ پارٹنر شبیر خان ممبرا کو دے رہے ہیں نئی پہنچان

اتحاد بلڈرس اینڈ ڈیولپرس کے منیجنگ پارٹنر شبیر خان

اتحاد بلڈرس اینڈ ڈیولپرس کے منیجنگ پارٹنر شبیر خان

دانش ریاض برائے معیشت
مہاراشٹر کے ضلع تھانے میں سہیادری پہاڑی سلسلہ اوراُلہاس ندی کاڈیلٹاجسے عرف عام میں کھاڑی کہا جاتا ہے کے بیچ بسا شہر ممبرا اب دنیا میں غیر معروف نہیں ہے۔’’بدنام گر نہ ہوں گے کیا نام نہ ہوگا ‘‘اس شہر کی مقبولیت پر صادق آتا ہے ۔۱۹۸۰؁ کی دہائی میں جب شہر بسنا شروع ہوا تھا، بنیادی سہولیات سے محروم شہر کہلاتا تھا۔مہاراشٹر راجیہ اردو ساہتیہ اکیڈمی کے سابق رکن شاہد ندیم اعظمی کہتے ہیں’’اس وقت نہ تو بجلی تھی نہ ہی سڑک، آٹو رکشہ کی تعداد بھی بہت کم تھی ،ہم لوگ گھنٹوں لائن میں کھڑے رہتے تب کہیں جاکر ممبرا اسٹیشن سے کوسہ آنے کے لئے رکشہ ملتا۔گوکہ آبادی بہت کم تھی لیکن زندگی گذارنے کے بنیادی سہولیات سے یہ شہر محروم تھا‘‘۔تعمیراتی کام کا حوالہ دیتے ہوئے شاہد ندیم کہتے ہیں ’’رشید کمپائونڈ میں لوگ آباد ہونا شروع ہورہے تھے گوکہ پورا علاقہ کھیت تھا لیکن اسی زمین پر جھگی جھوپڑیا ں تعمیر ہو رہی تھیں جبکہ وفا پارک کی بنیاد رکھ دی گئی تھی اور لوگ ٹی ایم سی پروجیکٹ میںانتہائی سست رفتاری کے ساتھ بکنگ کروا رہے تھے چونکہ موجودہ بائی پاس اس وقت تعمیر نہیں ہوا تھا اور اسٹیشن سے آنے والی سڑک ہی ہائی وے کہلاتی تھی لہذا لوگ باگ خال خال ہی اس طرف کا رخ کیا کرتے تھےلیکن رفتہ رفتہ اچھے لوگوں نے بھی ممبرا کو اپنا مسکن بنایا اور پھر یہ شہر آباد ہونا شروع ہوگیا ۔یقیناً جن لوگوں نے اس شہر کو خوبصورت بنانے کی کوشش کی ہے اس میں قابل ذکر نام شبیر خان اعظمی کا بھی ہے‘‘۔
آل انڈیامجلس اتحاد المسلمین (ایم آئی ایم )کے کارپوریٹر شاہ عالم اعظمی کہتے ہیں ’’ممبرا کی تعمیر و ترقی میں جن لوگوں نے اہم کردار ادا کیا ہے ان میں ایک نام شبیر خان صاحب کا بھی ہے۔یہ میرا ذاتی مشاہدہ ہے کہ غریب و مسکین کی امداد،نادار طلبہ و طالبات کی تعلیمی مدد ،نوجوانوں کے اندر جوش و خروش پیدا کرنے کے لئے مختلف ٹورنامنٹ کا انعقاد یہ سب شبیر خان کے ہی مرہون منت ہے‘‘۔شاہ عالم مزید کہتے ہیں ’’کوسہ ممبرا میںیوں تو بہت سارے صاحب خیر موجود ہیں لیکن لوگوں کی عزت کرنا،لوگوں سے محبت کرنا ،رشتہ داروں دوست و احباب کا خیال رکھنا یہ شبیر خان کا ہی وصف ہے۔غریب غربا کے شادی بیاہ کا معاملہ ہو،سوشل ایشوز پر بڑھ چڑھ کر حصہ لینے کی بات ہو یا پھر سماج میں بہتری پیدا کرنے کے لئے مختلف مہمات کا آغاز ہو ان تمام کاموں میں لوگ شبیر خان کا نام نہیں بھولتے۔‘‘گفتگو کو مزید دلچسپ بناتے ہوئے ایم آئی ایم کے کارپوریٹر کہتے ہیں ’’یہ دیکھا گیا ہے کہ جب اللہ تعالیٰ کسی کو نوازتا ہے تو اس کے اندر تکبر اور گھمنڈ آجاتا ہے لیکن شبیر بھائی کا معاملہ یہ ہے کہ تکبر اور گھمنڈ چھوکر نہیں گذرا اور عام آدمی سے بھی وہ اسی خوش اسلوبی سے ملتے ہیں جس طرح وہ اپنے دوست و احباب سے ملتے ہیں‘‘۔
ممبرا کی مشہور سماجی شخصیت ہدی کنسٹرکشن کے مالک عادل خان اعظمی جنہوں نےزمانہ طالب علمی سے ہی شبیر خان کودیکھا ہے معیشت سے گفتگو کرتے ہوئے کہتے ہیں ’’بچپن میں ہم دونوں نے ایک ساتھ پڑھائی کی ہے۔ ثانوی درجات میں ہمارا ساتھ رہااور جو محبت بچپن میں استوار ہوئی وہ اب بھی قائم ہے۔ تیس چالیس برس کا عرصہ گذر چکا ہے لیکن دوستی کی گانٹھ مزید گہری ہوتی گئی ہے۔شبیر کی شہرت جب زمانے بھر میں نہیں تھی اس وقت بھی وہ اچھے انسان تھے اور اب بھی جبکہ ہزاروں لوگوں سے مختلف تعلقات استوار ہوئے ہیں ان کے خلاف گفتگو کرنے والے کم ہی لوگ پائیں گے‘‘۔ عادل خان اعظمی کہتے ہیں ’’ممبرا میں تعمیری کاموں کے حوالے سے شبیر خان کا نام شاہ سرخیوں میں لکھے جانے کے لائق ہے ۔اگر کسی نے ممبرا کوسہ کو مثبت فکر عطا کرنے کی کوشش کی ہے تو ان میں ایک اہم نام شبیر خان کا بھی ہے۔یقیناًحالات و واقعات سے جوجھتے ہوئے جس طرح انہوں نے اپنا مقام بنایا ہے یہ کم ہی لوگوں کے نصیب میں آتا ہے‘‘۔
اتحاد بلڈرس اینڈ ڈیولپرس کے پارٹنر کاروباری شراکت دار عظیم شیخ شبیر خان کی خوبیوں کا تذکرہ کرتے ہوئے کہتے ہیں ’’معاملات میں صاف ستھرے کردار کا حامل اگر ممبرا کوسہ میں کچھ لوگ ہیں تو ان میں ایک نام شبیر خان کا بھی ہے۔‘‘عموماً معاشرے میں بلڈروں سے ان لوگوں کو شکایت رہتی ہے جنہوں نے ان سے فلیٹ یا زمین جائداد کا معاملہ کیا ہو لیکن اس معاملے میں بھی عوام شبیر خان کی تعریف کرتے نہیں تھکتی ۔ دی لیجنڈ آف آل مارشل آرٹ ایسو سی ایشن کے سکریٹری یعقوب خان کہتے ہیں ’’بغیر کسی ذاتی منفعت کے اگر کوئی شخص خلوص و للہیت کے ساتھ کام کر رہا ہے تو وہ شبیر خان ہیں ۔اللہ تعالیٰ نے خدمت خلق کا جذبہ کوٹ کوٹ کر بھرا ہے ۔کسی کے اندر اگر صلاحیت ہے اور وہ محض مالیات کی کمی کی وجہ سے اپنی صلاحیتوں کو جلا نہیں بخش پا رہا ہےتو ایسے لوگوں کے لئے شبیر بھائی مسیحا ہیں۔‘‘یعقوب کہتے ہیں ’’۲۰۱۷؁ اور ۲۰۱۸؁ میں مجھے کچھ بچوں کو آذربائیجان اور سائوتھ افریقہ مارشل آرٹ کے مقابلے کے لئے بھیجنا تھا ،چونکہ بچے غریب تھے اور مالی اخراجات برداشت نہیں کر سکتے تھے لہذا شبیر بھائی نے ان کی مدد کی اور لاکھوں روپیہ خرچ کیا۔اسی طرح جب روس کے مشہور ماسٹر ممبرا آئے تو ان کے تمام اخراجات بھی شبیر بھائی نے ہی برداشت کئے تھے‘‘۔
یہ ایک حقیقت ہے کہ جب کوئی شخص صدق دلی کے ساتھ سماج کی خدمت کرتا ہے تو اللہ تعالیٰ اس کی قدر میں اضافہ فرما دیتا ہے۔اتحاد بلڈرس اینڈ ڈیولپرس کے منیجنگ پارٹنر شبیر خان بھی چونکہ ممبرا کوسہ کو نئی پہچان دے رہے ہیںلہذا ان کے چاہنے والوں کی بھی بڑی تعداد ہے جو ان کے لئے نیک دعائیں کیا کرتی ہے۔

تعارف: نمائندہ خصوصی

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*