۔۔توکوئی دیش میں بھوکا نہیں سوئے گا:اڈانی

Gautam-Adani-all-companies

ممبئی: صنعت کار گوتم اڈانی نے جمعرات کو کہا کہ اگر ہندوستان 2050 تک 30,000 بلین ڈالر کی معیشت بن جاتا ہے تو ملک میں کوئی بھی بھوکا نہیں سوئے گا۔ اڈانی نے ٹائمز نیٹ ورک انڈیا اکنامک کنکلیو میں کہا، “ہم سال 2050 سے تقریباً 10,000 دن دور ہیں۔

اس عرصے کے دوران، مجھے امید ہے کہ ہم اپنی معیشت میں تقریباً 25 ہزار بلین ڈالر کا اضافہ کریں گے۔‘‘ انہوں نے کہا، ’’یہ روزانہ 2.5 بلین ڈالر بنتا ہے۔ ساتھ ہی میں یہ بھی امید کرتا ہوں کہ ہم غربت کی تمام اقسام کو پیچھے چھوڑ دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ اگر معیشت منصوبہ بندی کے مطابق ترقی کرتی ہے تو ان 10 ہزار دنوں کے دوران اسٹاک مارکیٹ کی مارکیٹ کیپٹلائزیشن میں تقریباً 40 ہزار ارب ڈالر کا اضافہ ہوگا… جو کہ سال 2050 تک روزانہ چار ارب ڈالر بنتا ہے۔

اڈانی گروپ کے سربراہ نے کہا کہ اس مدت میں 1.4 بلین لوگوں کی زندگیوں میں بہتری لانا میراتھن کی طرح لگ سکتا ہے، لیکن یہ زیادہ طویل مدت کے ‘اسپرنٹ’ (تیز دوڑ) کی طرح ہے۔

گوتم اڈانی نے 2021 میں دنیا کے دو امیر ترین آدمیوں ایلون مسک اور جیف بیزوس کی اضافی دولت میں 49 بلین ڈالر کا اضافہ کیا ہے اور ان کا ماننا ہے کہ بحیثیت قوم ہم یہ کام صرف 10,000 دنوں میں کر سکتے ہیں۔

اسی وقت، عالمی بینک نے ملک میں غربت پر اپنی تازہ ترین رپورٹ میں کہا ہے کہ ہندوستان میں 2011 اور 2019 کے درمیان انتہائی غربت میں 12.3 فیصد پوائنٹس کی تیزی سے کمی آئی ہے۔ 2011 میں 22.5 فیصد سے 2019 میں 10.2 فیصد تک گر گئی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


ہمارے بارے میں

www.maeeshat.in پر ہم اقلیتوں خصوصا  مسلم دنیا میں کاروبار کو متعارف کرانے اور فروغ دینے کا ارادہ رکھتے ہیں جو حلال اور حرام کے حوالے سے اپنے آپ کو ممتاز کرتے ہیں۔ شروع سے ہی اس جریدے/ویب سائٹ نے مسلمان صنعت کاروں اور تاجروں کو قائل کیا ہے کہ وہ ہندوستانی معیشت کو مضبوط بنائیں اور دوسرے کارپوریٹ کے ساتھ اپنے تعلقات کو مزید فروغ دیں۔


CONTACT US

CALL US ANYTIME




نیوز لیٹر