نیپال: ایندھن کی بچت کے لیے دو دن کی عام تعطیل

کھٹمنڈو۔ نیپال کی حکومت ایندھن کی کھپت میں کمی کے لیے اب 15 مئی سے ہفتے میں دو دن عام تعطیل دے گی۔

حالیہ مہینوں میں ملک میں ایندھن کی قیمتوں میں نمایاں اضافہ ہوا ہے اور حکومت اس کی کھپت کو کم کرنا چاہتی ہے۔ مواصلات اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے وزیر گیانیندر بہادر کارکی نے صحافیوں کو بتایا کہ 26 اپریل کو ہونے والی کابینہ کی میٹنگ میں 15 مئی سے ایک ہفتے میں دو دن کی عام تعطیل نافذ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

فی الحال  نیپال ہفتے کے روز ایک دن کی عام تعطیل کا نفاذ کر رہا ہے۔ ذرائع کے مطابق نئے اصول کے ساتھ اتوار کو اضافی تعطیل کے طور پر شامل کیا گیا ہے۔ کابینہ کے فیصلے کے مطابق، پانچ روزہ کام کے اوقات کار موجودہ دفتری اوقات صبح 10 بجے سے شام 5 بجے تک، صبح 9.30 سے ​​شام 5.30 بجے تک تبدیل کر دیے جائیں گے۔

اس سے قبل، نیپال کے مرکزی بینک نے حکومت کو ایندھن کی کھپت کو کم کرنے کے لیے دو روزہ عام تعطیل متعارف کرانے کا مشورہ دیا تھا کیونکہ تعطیلات کے دوران عوامی نقل و حرکت نمایاں طور پر کم ہو جاتی ہے۔

سینٹر فار ٹریڈ اینڈ ایکسپورٹ پروموشن کے مطابق جولائی 2021 کے وسط میں شروع ہونے والے موجودہ مالی سال کے پہلے آٹھ مہینوں میں نیپال کے لیے سب سے بڑی درآمدی شے ایندھن ہے، جو کل تجارتی سامان کی درآمدات کا 14 فیصد سے زیادہ ہے۔

دنیا کے دیگر حصوں کی طرح نیپال میں بھی حالیہ مہینوں میں روس-یوکرین تنازعہ اور دیگر عوامل کی وجہ سے ایندھن کی قیمتوں میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔ دریں اثنا، مرکزی بینک کے اعداد و شمار کے مطابق، نیپال کے مجموعی زرمبادلہ کے ذخائر مارچ کے وسط میں 18.5 فیصد کم ہو کر 9.58 بلین ڈالر رہ گئے جو کہ رواں مالی سال کے آغاز میں 11.75 بلین ڈالر تھے۔

زرمبادلہ کے ذخائر میں کمی کے ردعمل میں حکومت نے بعض مصنوعات کی درآمد پر پابندی عائد کر دی ہے اور حکومتی اداروں کے لیے فیول الاؤنس میں رواں مالی سال کے اختتام تک 20 فیصد کمی کر دی ہے۔ 1990 کی دہائی کے آخر میں، نیپال نے سرکاری ملازمین کی کارکردگی اور پیداواری صلاحیت کو بڑھانے کے مقصد سے دو دن کی ہفتہ وار چھٹی کا استعمال کیا تھا مگرچند ماہ بعد فیصلہ واپس لے لیا گیا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *