تمل ناڈو-کیرالہ سرحد پر ٹماٹر فلو کا خوف

TOMATO FLU

چنئی: کورونا وبا کی مشکلات کم ہوئی ہی تھیں کہ اب تمل ناڈو-کیرالہ سرحد پر ٹماٹر فلو کا خوف پھیل گیا ہے۔ تمل ناڈو-کیرالہ سرحد پر تمام مسافروں کے ٹیسٹ کیے جا رہے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق کیرالہ اور تمل ناڈو کے سرحدی اضلاع میں ٹماٹر فلو کا قہر بڑھتا جا رہا ہے۔

میڈیکل ٹیمیں کیرالہ سے تمل ناڈو کے کوئمبٹور ضلع میں آنے والے لوگوں کے ٹیسٹ کر رہی ہیں۔ جن لوگوں کو بخار کی شکایت ہے ان کے ضروری طبی ٹیسٹ کیے جا رہے ہیں۔ اس بیماری میں بخار کے علاوہ سرخ دانے جیسی علامات پائی جاتی ہیں۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ مسافروں کی جانچ کے لیے میڈیکل افسران کی ایک ٹیم کو تعینات کیا گیا ہے۔خاص طور پر بچوں پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے اور اس وجہ سے تمام گاڑیوں کی چیکنگ کی جارہی ہے۔

مقامی میڈیا کے مطابق کیرالہ میں ‘ٹماٹو فلو’ یا ‘ٹماٹو فیور’ کے 82 کیس درج ہوئے ہیں۔ ریاستی محکمہ صحت اس صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے کیونکہ یہ بیماری پانچ سال سے کم عمر کے بچوں کو متاثر کرتی ہے۔ کیرالہ کی ویب سائٹ کومڈی کی رپورٹ کے مطابق، مذکورہ بالا تصدیق شدہ کیس سرکاری اسپتالوں سے رپورٹ کیے گئے ہیں اور پرائیویٹ اسپتالوں میں رجسٹرڈ انفیکشنز کو شمار نہیں کیا گیا ہے۔

محکمہ صحت نے نیڈوتھور، آنچل اور آریانکاو کے علاقوں میں احتیاطی اقدامات کیے ہیں جہاں یہ کیس رپورٹ ہوئے ہیں۔ ۔

ٹماٹر بخار کیا ہے؟

ٹماٹر بخار ایک نامعلوم بخار ہے جو زیادہ تر کیرالہ میں ہوتا ہے۔ تاہم، یہ واضح نہیں ہے کہ یہ بیماری وائرل بخار ہے یا چکن گونیا یا ڈینگی بخار کا اثر ہے۔ کولم، نیڈوتھور، آنچل اور آرینکاو اس انفیکشن سے متاثر ہوئے ہیں۔ حفاظتی اقدام کے ایک حصے کے طور پر، آنگن واڑی مراکز کو بند کر دیا گیا ہے جبکہ حکام نے دیہاتوں میں بیداری مہم چلائی ہے۔

ٹماٹر بخار کی علامات

جو لوگ اس بیماری سے متاثر ہوتے ہیں ان میں تقریباً ٹماٹر کے سائز کے دانے ہوتے ہیں اور جلد میں جلن ہوتی ہے اور زبان پر پانی کی کمی کی علامات ظاہر ہوتی ہیں۔ کچھ مریضوں نے دعویٰ کیا ہے کہ پھوڑے پھوڑے سے کیڑے نکلے تھے جو دانے پر نکلتے ہیں۔ تیز بخار، جسم میں درد، جوڑوں کی سوجن، تھکاوٹ، ٹماٹر کے سائز کے دانے اور منہ میں جلن، ہاتھوں، گھٹنوں، کولہوں کی رنگت وغیرہ۔

ٹماٹر بخار کی علامات

جو لوگ اس بیماری سے متاثر ہوتے ہیں ان میں تقریباً ٹماٹر کے سائز کے دانے ہوتے ہیں اور جلد میں جلن ہوتی ہے اور زبان پر پانی کی کمی کی علامات ظاہر ہوتی ہیں۔ کچھ مریضوں نے دعویٰ کیا ہے کہ پھوڑے پھوڑے سے کیڑے نکلے تھے جو دانے پر نکلتے ہیں۔ تیز بخار، جسم میں درد، جوڑوں کی سوجن، تھکاوٹ، ٹماٹر کے سائز کے دانے اور منہ میں جلن، ہاتھوں، گھٹنوں، کولہوں کی رنگت وغیرہ۔

احتیاطی تدابیر اور علاج اگر بچے میں ان علامات میں سے کوئی بھی ہو تو قریبی ڈاکٹر سے رجوع کریں۔ بیماری سے متاثر ہونے والوں کو بہت زیادہ رقیق کھانے کا مشورہ دیا جاتا ہے۔ ریشوں پر خراش نہیں آنی چاہیے۔ لوگوں کو متاثرہ شخص سے فاصلہ برقرار رکھنا چاہیے۔ مریض اور اس کے آس پاس کے لوگوں کے لیے صفائی کا خیال رکھنا ضروری ہے۔ مناسب آرام کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ بخار، بہت سے معاملات میں، ایک ہفتے تک رہتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


ہمارے بارے میں

www.maeeshat.in پر ہم اقلیتوں خصوصا  مسلم دنیا میں کاروبار کو متعارف کرانے اور فروغ دینے کا ارادہ رکھتے ہیں جو حلال اور حرام کے حوالے سے اپنے آپ کو ممتاز کرتے ہیں۔ شروع سے ہی اس جریدے/ویب سائٹ نے مسلمان صنعت کاروں اور تاجروں کو قائل کیا ہے کہ وہ ہندوستانی معیشت کو مضبوط بنائیں اور دوسرے کارپوریٹ کے ساتھ اپنے تعلقات کو مزید فروغ دیں۔


CONTACT US

CALL US ANYTIME




نیوز لیٹر