ٹائم2022 :100 بااثر ترین شخصیات میں 2 مسلم خواتین

TIME 100
TIME 100

پیر کو ٹائم میگزین نے دو نامور مسلم خواتین  بشمول  تنزانیہ کی صدر سامعہ سلوہ حسن اور افغانستان کی صحافی ہدیٰ خاموش کو 2022 کی 100 بااثر ترین شخصیات میں شامل کیا ہے۔

62 سالہ سامعہ سلوہ حسن تنزانیہ کی سیاست داں ہیں جو تنزانیہ کی چھٹی اور موجودہ صدر کے طور پر خدمات انجام دے رہی ہیں۔ انہوں نے میگوفولی دور میں تنہائی کے بعد تنزانیہ کو ایک نئی سفارتی پہچان دی ہے۔

صدر سامعہ سلوہ حسن نے مارچ 2021 میں عہدہ سنبھالا، اور ان کی قیادت کو پذیرائی ملی۔ ان کی قیادت سے تنزانیہ میں بڑا فرق آیا ہے۔   تنزانیہ کی تاریخ میں پہلی خاتون صدر کے بارے میں میگزین نے لکھا کہ سیاسی حریفوں کے درمیان بات چیت کے لیے ایک دروازہ کھل گیا ہے، جمہوری نظام پر اعتماد بحال کرنے کے لیے اقدامات کیے گئے ہیں، آزادی صحافت کو بڑھانے کے لیے کوششیں کی گئی ہیں، اور خواتین اور لڑکیوں کے لیے ایک نیا رول ماڈل ہے۔

ہدیٰ خاموش

26 سالہ ہدیٰ خاموش خواتین کے حقوق کی ایک معروف کارکن، صحافی اور مہم چلانے والی خاتون ہیں۔ جنہوں نے خواتین کی صحت سے متعلق مسائل کے بارے میں بیداری پیدا کرنے کے لیے کئی عوامی پروگرام شروع کیے ہیں۔

طالبان کی واپسی سے پہلےخاموش نے بااختیار بنانے کے لیے اسکولوں کا دورہ کیا اور خواتین کی صحت کے مسائل پر اہم قدم اٹھائے۔ انہوں نے شاعری کی اور صدر کے لیے انتخاب لڑنے کی بات کی۔

ٹائم میگزین نے لکھا ہے کہ کابل سے امریکی انخلا کے بعد خاموش نے اپنے حقوق کا مطالبہ کرنے والی بہت سی بہادر خواتین کے ساتھ مظاہرے کیے بلکہ گرفتاری کا خطرہ مول لیا۔

ذرائع کے مطابق خاموش ان چھ افغان خواتین میں سے ایک تھیں جنہیں طالبان حکام کے ساتھ بیٹھنے کی دعوت دی گئی تھی کیونکہ انہوں نے اگست 2021 میں افغانستان کا کنٹرول سنبھالنے کے بعد کسی مغربی ملک کا اپنا پہلا مدعو دورہ کیا تھا تاکہ افغانستان میں انسانی اور معاشی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا جا سکے۔

کاروبار سے لے کر سیاست تک مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی دنیا کی 100 مشہور شخصیات کو اس میں شامل کیا گیا ہے۔

ہندوستان کی طرف سے اڈانی گروپ کے چیئرپرسن گوتم اڈانی بھی اس فہرست میں شامل ہیں۔ اس کے ساتھ ہی یوکرین کی جنگ کے بعد پوری دنیا میں مقبول ہونے والے یوکرینی صدر ولادیمیر زیلینسکی کا نام بھی اس فہرست میں شامل ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


ہمارے بارے میں

www.maeeshat.in پر ہم اقلیتوں خصوصا  مسلم دنیا میں کاروبار کو متعارف کرانے اور فروغ دینے کا ارادہ رکھتے ہیں جو حلال اور حرام کے حوالے سے اپنے آپ کو ممتاز کرتے ہیں۔ شروع سے ہی اس جریدے/ویب سائٹ نے مسلمان صنعت کاروں اور تاجروں کو قائل کیا ہے کہ وہ ہندوستانی معیشت کو مضبوط بنائیں اور دوسرے کارپوریٹ کے ساتھ اپنے تعلقات کو مزید فروغ دیں۔


CONTACT US

CALL US ANYTIME




نیوز لیٹر