مانو میں اردو صحافت پر بین الاقوامی کانفرنس

manuu

تلخیص بھیجنے کی آخری تاریخ میں 25 اگست تک توسیع
حیدرآباد، 29 جولائی :مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے شعبہ ترسیل عامہ و صحافت کی جانب سے رواں سال نومبر میں منعقد کی جانے والی تین روزہ بین الاقوامی کانفرنس بعنوان ”اردو میڈیا: ماضی، حال اور مستقبل“ میں پیش کیے جانے والے مقالوں کی تلخیص بھیجنے کی آخری تاریخ میں توسیع کی گئی ہے۔
پروفیسر احتشام احمد خان،کنوینر کانفرنس و ڈین اسکول آف ایم سی جے کے مطابق دنیا کے مختلف حصوں سے بڑے پیمانے پر موصول ہونے والی گزارشات کے پیش نظر مقالوں کی تلخیص بھیجنے کی آخری تاریخ میں 25 اگست 2022 تک توسیع کی گئی ہے۔
انہوں نے کہا کہ تلخیص کی تنقیح کے بعد ایڈیٹوریل بورڈ 10 ستمبر 2022 تک شرکا (جن کی تلخیص منتخب کی جاتی ہے) کو اپنا مکمل تحقیقی مقالہ جمع کرنے کو کہے گا۔ مقالے بھیجنے کی آخری تاریخ 30 ستمبر 2022 مقرر کی گئی ہے جبکہ ان کی جانچ پڑتال کے بعد ایڈیٹوریل بورڈ 5 اکتوبر 2022 تک ان کی منظوری کے حوالے سے شرکا کو مطلع کرے گا۔ مقالے کی قبولیت پر مقالہ نگاروں کو رجسٹریشن فیس 30 اکتوبر 2022 تک ادا کرنی ہو گی۔ تلخیص اور حتمی مقالے بھیجنے کا ای میل ایڈریس kusbc200ic@gmail.comہے۔
واضح رہے کہ 13، 14 اور 15 نومبر کو منعقد ہونے والی اس بین الاقوامی کانفرنس کا بنیادی مقصد اردو صحافت کے 200 سالہ جشن کو یادگار بنانا ہے اور اس میں پیش کیے جانے والے تحقیقی مقالات اردو صحافت کے شاندار ماضی اور خاص طور پر عالمی تناظر میں امن کے پھیلاواور اس کو فروغ دینے میں اس کے کردار اور شراکت داری کے متعلق ہوں گے۔
اس بین الاقوامی کانفرنس میں تحقیقی مقالے پیش کرنے کے خواہاں ملکی و غیر ملکی ریسرچ اسکالرز، ماہرین تعلیم، صحافی اور دیگر افراد تین زبانوں اردو، ہندی یا انگریزی میں اپنے مقالوں کی تلخیص بھیج سکتے ہیں، جس کے الفاظ کی تعداد 500 سے زیادہ نہیں ہونی چاہیے۔ مزید تفصیلات کے لیے اس ویب ایڈریس https://manuu.edu.in/sites/default/files/Event/Files/2022-06/IC-002.pdf پر کلک کریں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


ہمارے بارے میں

www.maeeshat.in پر ہم اقلیتوں خصوصا  مسلم دنیا میں کاروبار کو متعارف کرانے اور فروغ دینے کا ارادہ رکھتے ہیں جو حلال اور حرام کے حوالے سے اپنے آپ کو ممتاز کرتے ہیں۔ شروع سے ہی اس جریدے/ویب سائٹ نے مسلمان صنعت کاروں اور تاجروں کو قائل کیا ہے کہ وہ ہندوستانی معیشت کو مضبوط بنائیں اور دوسرے کارپوریٹ کے ساتھ اپنے تعلقات کو مزید فروغ دیں۔


CONTACT US

CALL US ANYTIME




نیوز لیٹر