موڈیز کی وارننگ،مہنگائی بھارت کی معیشت کو کھاجائے گی!

moodys-cuts-india-gdp-growt

نئی دہلی :(ایجنسی)

امریکی فائناشیل فرم موڈیز نے مہنگائی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ہندوستان کی جی ڈی پی ترقی کے اندازے کو کم کر دیا ہے۔ امریکی فرم نے جمعرات کو اپنی رپورٹ میں Moody’s Investors Service میں ملک میں بڑھتی مہنگائی پر تشویش کا اظہار کیا ہے جس کی وجہ سے ہندوستان کی معیشت میں بحالی کی رفتار سست پڑ سکتی ہے۔ اس رپورٹ میں سال 2022 کے لیے ہندوستان کی جی ڈی پی کی شرح نمو 9.1 فیصد سے گھٹا کر 8.8 فیصد کر دی گئی ہے۔

موڈیز گلوبل میکرو آؤٹ لک کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہائی فریکوئنسی ڈیٹا اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ گزشتہ سال دسمبر 2021 میں دیکھنے میں آنے والی ترقی نمو اس سال کے پہلے چار مہینوں میں بھی جاری ہے۔ لیکن خام تیل، خورد ونوس اور کھاد کی قیمتوں میں اضافے سے لوگوں کی آمدنی اور اخراجات پر برا اثر پڑ رہا ہے۔ اس کے ساتھ ہی، مہنگائی اور بجلی کی قیمتوں کو کنٹرول میں رکھنے کے لیے ریزرو بینک کی جانب سے سود کی شرح میں اضافہ کی وجہ سے مانگ کی وصولی سست پڑ سکتی ہے۔

موڈیز نے کہا کہ اس نے 2022 کے لیے ہندوستان کی جی ڈی پی ترقی کا اندازہ 9.1 فیصد سے کم کر کے 8.8 فیصد کر دیا ہے، جبکہ سال 2023 کے لیے جی ڈی پی ترقی کا اندازہ 5.4 فیصد پر برقرار رکھا ہے۔

 

 

 

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ ہندوستان میں سرمایہ کاری کا سلسلہ مضبوط رہے گا، جو مضبوط کریڈٹ نمو اور کارپوریٹ سیکٹر سے سرمایہ کاری، اور حکومت کی جانب سے کیپٹل اسکیموں پر بڑھتے ہوئے اخراجات سے چلتا ہے۔ اس کے ساتھ ہی اگر خام تیل کی قیمت اور کھانے پینے کی اشیاء کی قیمتوں میں مزید اضافہ نہیں ہوتا ہے تو ہندوستانی معیشت اتنی مضبوط ہے کہ ترقی کرتی رہے گی۔

 

 

 

مہنگائی کے اندازے میں اضافہ:

 

 

موڈیز نے مہنگائی میں اضافے کی پیش گوئی کی ہے۔ موڈیز کے مطابق، اس سال افراط زر کی اوسط 6.8 فیصد رہنے کا امکان ہے جیسا کہ پہلے 5.4 فیصد کی پیش گوئی کی گئی تھی۔

موڈیز سے پہلے بھی کئی بین الاقوامی اداروں نے ہندوستان کی ترقی کی پیشن گوئی کو کم کیا ہے۔ اس ماہ کے شروع میں، S&P گلوبل ریٹنگز نے مالی سال 2022-23 کے لیے اپنی جی ڈی پی کی ترقی کی پیشن گوئی کو 7.8 فیصد سے کم کر کے 7.3 فیصد کر دیا۔ اسی وقت، عالمی بینک نے اپریل میں ہندوستان کی جی ڈی پی کی شرح نمو کی پیشن گوئی کو گھٹا کر 8.7 فیصد کر دیا ہے۔ آئی ایم ایف نے بھی اپنی شرح نمو 9 فیصد سے کم کر کے 8.2 فیصد کر دی ہے۔

 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


ہمارے بارے میں

www.maeeshat.in پر ہم اقلیتوں خصوصا  مسلم دنیا میں کاروبار کو متعارف کرانے اور فروغ دینے کا ارادہ رکھتے ہیں جو حلال اور حرام کے حوالے سے اپنے آپ کو ممتاز کرتے ہیں۔ شروع سے ہی اس جریدے/ویب سائٹ نے مسلمان صنعت کاروں اور تاجروں کو قائل کیا ہے کہ وہ ہندوستانی معیشت کو مضبوط بنائیں اور دوسرے کارپوریٹ کے ساتھ اپنے تعلقات کو مزید فروغ دیں۔


CONTACT US

CALL US ANYTIME




نیوز لیٹر