حج کمیٹی آف انڈیا :سفرحج 2022سے متعلق تازہ رہنما اصول جاری

HAJJ NEW

حج کمیٹی آف انڈیا نے سفرحج 2022سے متعلق عازمین حج کےلے تازہ رہنما اصول جاری کیے ہیں تاکہ سفرحج کےدوران انھیں کسی طرح کی کوئی پریشانی نہ ہواور وہ خوش اسلوبی سے اپنے فریضہ حج کو اداکرسکیں ۔

حج کمیٹی آف انڈیا کی ایک ریلیز کے مطابق رہنما اصول میں خواتین سے متعلق کہاگیاہے ایسی خواتین کو جوحمل کے آخری مرحلہ میں ہیں طیارے میں سوار ہونے کی اجازت نہیں ہوگی کیونکہ ماں اور پیداہونے والے بچے کی صحت سے متعلق شدید خطرات لاحق ہوسکتے ہیں ۔ سعودی عرب کے حج حکام نے بھی اس کے تعلق سے متنبہ کیاہے ۔

اس میں عازمین حج کو صلاح دی گئی ہے کہ وہ اپنے پورے سفرحج کے دوران حج ویزا کی ہارڈ اور سافٹ کاپی اپنے پاس رکھیں تاکہ ضرورت پڑنے پر اسے دکھاسکیں ۔

سم کارڈ ایکٹی ویشن صرف سعودی عرب پہنچنے کےبعد ہی ہوگا۔عازمین حج کی سہولت کے لیے سم کارڈ فراہم کرنے والوں کی طرف سے مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ دونوں مقامات پر وافرتعداد میں کیوسک قائم کیے جائیں گے ۔تاہم ،ایکٹی ویشن کےلیے فنگر پرنٹ کی ضرورت ہوگی ۔

رہنما اصول میں اسمارٹ فون استعمال کرنے والے عازمین حج کو مشورہ دیاگیاہے کہ وہ ’’انڈین حاجیز انفارمیشن سسٹم ایپ ‘‘ڈاؤن لوڈ کریں ۔یہ ایپ بہت سی خدمات فراہم کرتی ہے جن میں رہائش کی پتہ لگانے اور کسی بھی شکایت کودرج کرنے کے لیے ٹول فری نمبر کی کنکٹویٹی شامل ہیں ۔

کووڈ -19کےموجودہ خطرے کے مدنظر عازمین حج کو صلاح دی گئی ہے کہ وہ ہروقت ماسک پہنیں ،چاہے دیگر ممالک کے حجاج کرام ضابطوں پر عمل کرتے ہوں یانہ کرتے ہوں ۔

عازمین حج کو خاص طورسے مشورہ دیا گیاہے کہ ’’حرم کے علاقہ میں زمین پر پڑی کسی بھی شے کو نہ چھوئیں ۔‘‘مزید برآں ،حرم کے علاقے میں کسی پرچم یا دیگر بینر وغیرہ کو نہ لے جائیں ۔نہ ہی شہر سے دور(جیسے تائف یا جدہ وغیرہ نہ جائیں )کیونکہ واپسی پر مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں دوبارہ داخلہ سے روکا جاسکتاہے۔

سعودی عرب میں حج اور عمرہ کی وزارت، صحت اور نظم ونسق سے متعلق مزید رہنمااصول جاری کر سکتی ہے جس کے بارے میں مناب وقت پر مطلع کیاجائیگا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *


ہمارے بارے میں

www.maeeshat.in پر ہم اقلیتوں خصوصا  مسلم دنیا میں کاروبار کو متعارف کرانے اور فروغ دینے کا ارادہ رکھتے ہیں جو حلال اور حرام کے حوالے سے اپنے آپ کو ممتاز کرتے ہیں۔ شروع سے ہی اس جریدے/ویب سائٹ نے مسلمان صنعت کاروں اور تاجروں کو قائل کیا ہے کہ وہ ہندوستانی معیشت کو مضبوط بنائیں اور دوسرے کارپوریٹ کے ساتھ اپنے تعلقات کو مزید فروغ دیں۔


CONTACT US

CALL US ANYTIME




نیوز لیٹر